6

مقبوضہ کشمیر ،سرینگر میں گرنیڈ حملے سے شہری جاں بحق ،پولیس اہلکاروں سمیت 34 زخمی

سرینگر مقبوضہ کشمیر کی سبزی منڈی کے قریب مولانا آزاد روڈ پر نامعلوم افراد کے گرنیڈ حملے میں ایک شخص جاں بحق اور بھارتی سیکیو رٹی فورسز کے 3 اہلکاروں سمیت 34 شہری زخمی ہوگئے۔دوسری جانب ستدانوں کو بی جے پی اور آر ایس ایس کی ان سازشوں دور رہنے کا انتباہ کیا گیا ہے۔علاوہ ازیں بھارتی فوجیوںکی تعیناتی اور دفعہ144کے تحت عائد پابندیوںکی وجہ سے مسلسل 92ویں روز بھی معمولات زندگی مفلوج رہے۔ تفصیلات کے مطابق ہری سنگھ اسٹریٹ پر واقع سبزی منڈی کے قریب گرنیڈ حملہ کیا گیا ہے، حملہ اس وقت کیا گیا جب مارکیٹ میں گاہکوں کا ہجوم تھا، حملے کی زد میں آکر 1 شخص جاں بحق اور 34 زخمی ہوگئے، زخمیوں میں پیرا ملٹری پولیس فورس کے 3 اہلکار بھی شامل ہیں۔ 15 دنوں میں یہ تیسرا گرنیڈ حملہ ہے۔دریں اثنا مقبوضہ کشمیر میں بھارت نواز سیاسی جماعتوںسے وابستہ افراد کوخبردار کیا گیا ہے کہ وہ بی جے پی اور آر ایس کی ان سازشوں سے خبردار رہیں جن کا مقصد عبوری حکومت کی تشکیل میں انہیں شامل کرنا ہے۔ کشمیر

میڈیاسروس کے مطابق یہ انتباہ سرینگر اورمقبوضہ کشمیر کے دیگر قصبوں میں مشتہر کئے گئے پوسٹروں کے ذریعے جاری کیاگیا ہے۔ نوجوانوں کے مختلف گروپوںاور حریت کارکنوںکی طرف سے جاری کئے گئے پوسٹروں میں سیاست دانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ کھلے عام ، خفیہ طورپر یا کسی بھی طریقے سے بی جے پی کے ساتھ تعاون نہ کریں ورنہ انہیں کشمیری عوام اور کشمیر کاز سے غداری کا مرتکب سمجھا جائے گا۔ادھر وادی کشمیر اور جموں کے مسلم اکثریتی علاقوں میںبڑی تعداد میں بھارتی فوجیوںکی تعیناتی اور دفعہ144کے تحت عائد پابندیوںکی وجہ سے مسلسل 92ویں روز بھی معمولات زندگی مفلوج رہے۔ مقبوضہ علاقے میں انٹرنیٹ اورپری پیڈ موبائل فون سروسزمسلسل معطل ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں